Maa Zahra Sa Lyrics

Noha Title Maa Zahra Sa
Noha Artist Shahid Baltistani
Click Here To Download Maa Zahra Sa Lyrics

Maa Zahra Sa Lyrics

سیدہ
طاہرہ
ہئے ماں زہرا

حسن حسین کی زخمی غریب ماں زہرا

تماچے کھاتی ہےبیٹوں کے درمیاں زہرا

کمر کے ساتھ شکستہ ہوئے ہیں بازو بھی
تمھاری ٹوٹی نہیں صرف پسلیاں زہرا

جو سانس لیتی ہے پہلو میں درد بھڑتا ہے
کہ اب تو لے بھی نہیں سکتی سسکیاں زہرا

تماچہ مارا ہے ظالم نے اس طرح تم کو
زمیں پہ ٹوٹ کے بکھری ہے بالیاں زہرا

حسن ہی جانے کہ مسجد سے گھر تک آتے ہوئے
تماچے کھا کے گری ہے کہاں کہاں زہرا

چھپائے کیسے علی کی نگاہ سے فضہ
تیرے لہو سے بھرا ہے تیرا مکاں زہرا

کچھ اور بھڑ تی ہے دشواری سانس لینے میں
کہیں جو سنتی ہے بچوں کی سسکیاں زہرا

علی سے پوچھ رہے ہیں حسین روتے ہوئے
کیا تازیانے کے قابل ہے میری ماں زہرا

کوئی سلام کا دیتا نہیں جواب اُسے
ہے تنہا فاتحِ خیبر کی قدر داں زہرا

بچا کے لائی ہے خنجر تلے سے اپنا امام
بڑی امیر تھی زینب تمھاری ماں زہرا

حسین تڑپے تکلمؔ نا کیوں تہے خنجر
تمھارے ہاتھ پہ دُرّوں کے تھے نشاں زہرا


Maa Zahra Sa Lyrics

Maa Zahra Sa is one of the best Noha by Shahid Baltistani.

You can listen this Noha online or download in MP3 from this site.

You can also read or download the lyrics of Maa Zahra Sa

Read or download lyrics of Maa Zahra Sa in roman urdu, urdu and english.

Popular Tags

  • Maa Zahra Sa Lyrics
  • Lyrics of Maa Zahra Sa
  • Maa Zahra Sa Lyrics Download
  • Download Lyrics of Maa Zahra Sa
  • Maa Zahra Sa Lyrics By Shahid Baltistani